ذبح عظیم حصہ چہارم

Posted on at


                            

                                                                 

جس وقت حضرت ابراھیم علیہ سلام اپنے بیٹے کے ساتھ خانہ کعبہ کی تعمیر فرما رہے تھے اور جب دیواریں اٹھا رہے تھے تو ساتھ ساتھ دعا بھی مانگے جا رہے تھے کہ اے ہمارے رب! ہمیں اور ہماری اولاد کو صرف اور صرف اپنا تابع بنا بے شک تیری ہی ذات توبہ قبول کرتی ہے، بے شک تو ہی مہربان ہے یا الله ، صرف تو ہی رحمن ہے. اے الله تعالیٰ! ان میں انہی میں سے ایک رسول کو بھیج دے جو ان پر تیری آیتیں تلاوت فرمائے اور لا علم لوگوں کو سیدھا راستہ دیکھاۓ اور انھیں تیری کتاب اور پختہ علم سکھائے اور ان کو ستھرا کر دے. بے شک تو ہی جاننے والا ہے، غالب ہے اور حکمت رکھنے والا ہے

 

حضرت ابراھیم علیہ سلام پی ہر قسم کی جو آزمائش آتی گئی وہ الله کی رضا اور اسکی محبت میں اس مشکل مرحلے کو ہر دفع عبور کرتے گئے. پہلے نمرود کے سامنے حق پیغام سنانا، ایک ایسا ظالم بادشاہ جو خود کو خدا کہلواتا تھا . یہ کوئی آسان کام نہیں تھا

 

پھر بڑھاپے کی عمر میں اولاد عطا کر کے اپنے گھر والوں کو بے یار و مددگار ایک تپتے ہوئے ویران صحرا میں تنہا چھوڑ کر جانا صرف الله کی رضا اور اسکی خوشنودی حاصل کرنے کے لئے . میرے دوستوں ! اتنی اطاعت اپنے رب کی ابرھیم علیہ سلام جیسی عظیم ہستی ہی کر سکتے تھے.

 

پھر اسی اولاد کو اپنے ہاتھ سے ذبح کرنا اللہ کی رضا کے لئے، ایسی مثال قائم کی جسے قیامت تک کے آنے والے مسلمان یاد رکھیں گے اور ان کی اسی جذبے کو عید قرباں میں زندہ کرتے رہے گے. اتنا صبر اس خلیل میں ہی تھا

 

اور الله نے اسی لئے تو ان کو اپنا خلیل کہا اور لقب عطا کیا خلیل الله

                                  

حضرت ابراھیم علیہ سلام کی قربانیوں کے صلے میں الله نے انکی دعا قبول کی اور نبیوں کے امام مصطفیٰ صل الله علیہ وسلم کو بھیجا ، اور اس ریگستان کو بھی گلشن میں بنایا جہاں اسماعیل علیہ سلام نے پیاس سے اپنی ایڑیاں رگڑی تھیں اور اسی جگہ کو اسلام کا عظیم مرکز بنایا جو قیامت تک رہے گا

 

الله آپ کا حامی و ناصر ھو

آمین

بلاگ رائیٹر

نبیل حسن 



About the author

RoshanSitara

Its my hobby

Subscribe 0
160