نبی کریم کی خصوصیات حصّہ سوئم

Posted on at


 

الله تعالیٰ نے فرمایا کہ میں اپنے حبیب صل الله علیہ وسلم کی زبان پر بولتا ہوں اور جو بھی آپ بولتے ہیں میری مرضی اور حکم سے ہی بولتے ہیں

الله تعالیٰ نے ان کے ہاتھ پر کی گئی بیعت کو اپنی اپنی بیعت فرمایا

 

الله تعالیٰ نے فرمایا کہ آپ صل الله علیہ وسلم کا ہر کام میری ہی رضا سے ھوتا ہے

 

الله تعالیٰ کے فرائض کی ادائیگی آپ صل اللہ علیہ وسلم کی سنتوں کے ادا کئے بغیر مقبول و منظور نہیں

 

الله تعالیٰ نے آپ صل الله علیہ وسلم کو اپنا شاہد بنا کر بھیجا ، مبشر ، نذیر اور بشیر بنا کر معبوث کیا . شاہد کی صفت کے لئے کسی زمانے کی قید نہیں

 

الله رب العالمین نے اپنے پیارے حبیب مصطفیٰ صل الله علیہ وسلم کو بہت پیارے ناموں سے نوازا ہے جیسے کہ یاسین ، طہ ، مزممل اور مدثر ، اور آپ کی چیزوں اور شہر کی قسمیں کھائیں

 

الله تعالیٰ نے بذات خود آپ صل الله علیہ وسلم کو لوگوں کے شر سے محفوظ رکھنے کہ ذمہ لیا

 

الله تعالیٰ نے آپ صل الله علیہ وسلم پر آخری کتاب قرآن مجید اتاری اور اس عظیم کتاب کو جو کہ ہدایت سے بھرپور ہے ، خود حفاظت کا ذمہ لیا

 

الله تعالیٰ اور اس کے فرشتے آپ صل الله علیہ وسلم پر درود اور سلام بھیجتے ہیں اور الله نے اپنے کلام پاک میں مومنوں کو بھی تلقین فرمائی

 

آپ صل اللہ علیہ وسلم کے گھر اور منبر کے درمیان مسجد نبوی میں راستہ جنّت کے باغوں میں سے ایک باغ ہے

 

سوره الحجرات کی دو آیتیں آپ صل الله علیہ وسلم کے روزہ اطہر پر لکھی گئی ہیں جن میں الله پاک فرماتا ہے کہ مرے نبی کی بارگاہ میں اپنی آواز کو دھیمی کر لیا کرو ، کہیں ایسا نہ ہو کہ آواز اونچی ہو جاۓ اور تمھارے اعمال اس جرم کی پاداش میں ختم کر دیے جایئں اور تم کو اندازہ بھی نہ ہو پاۓ

 

آپ صل الله علیہ وسلم کی لحد مبارک کہ وہ حصّہ جس سے آپ کہ جسد اطہر مس کر رہا ہے ، نہایت افضل ہے

 

آپ صل الله علیہ وسلم کا پسینہ مبارک خوشبودار تھا

 

آپ کی امت تمام امتوں کی سردار ہے جسے لیلتہ القدر کی راتیں نصیب ہوئیں

 

صرف آپ صل الله علیہ وسلم کو ہی تمام انبیاء کرام میں یہ شرف حاصل ہے کہ آپ کو آسمانوں کی سیر کرائی گئی . جنّت اور دوزخ کا مشاہدہ کرایا گیا اور الله تعالیٰ کے انوار کا مشاہدہ بھی ہوا

بلاگ رائیٹر

نبیل حسن  

 



About the author

RoshanSitara

Its my hobby

Subscribe 0
160