'''''''غزل '''''''

Posted on at


مجھے اکثر تم یاد آتے ہو            

 

 

تیری یاد اکثر تنہائی میں آکر رولاتی ہے مجھے

تیری یاد سے دنیا میں جیتے اور مرتے ہے ہم

         مجھے اکثر تم یاد آتے ہو

 

 

 

تیری ہر ایک عدا یاد آتی ہے مجھے

تیری یاد کبھی خواب بن کر ہنساتی ہے مجھے

       مجھے اکثر تم یاد آتے ہو

 

 

 

تیری یاد سے خوشبو آتی ہے مجھے

ایسا لگتا ہے جیسے باغ میں پھول کھلے ہو

       مجھے اکثر تم یاد آتے ہو

 

 

 

تیری یاد کرنے سے دل کو سکوں ملتا ہے مجھے

تیری یاد ہر پل تڑپاتی ہے مجھے

            مجھے اکثر تم یاد آتے ہو

 

                                                                                                                           

تیری یاد میں پھولوں سے ہو گیا محبت مجھے

تیری یاد نے قید کے رکھا ہے مجھے

       مجھے اکثر تم یاد آتے ہو

 

 

 

 

 

 

 

 



About the author

jamshedannax

I'm Jamshed the Boiler Engineer. Interested In Article writing there I joined Film Annex to explore my knowledge and ideas.

Subscribe 544
160