!عید کے رنگ۔۔۔۔

Posted on at


 


عید کے رنگ۔۔۔۔!


امت مسلہ پر اللہ تعالٰی کے بے شمار انعامات میں دو مواقع (تہوار) ایسے ہیں جن کو عید کے دن کہا جاتا ہے اور یہ سال میں 2 بار آتے ہیں یعنی ایک تہوار رمضان المبارک کے بعد شوال کے پہلے دن جسے عید الفطر کہا جاتا ہے اور ایک تہوار عید الاضحی (قربانی کی عید) کہلاتا ہے


رمضان المبارک کے مہینے کے بعد اللہ تعالٰی نے مسلمانوں کو عید الفطر کا تحفہ عطا کیا ہے، یہ عید 3 تین تک منائی جاتی ہے، اور اسے چھوٹی عید بھی کہا جاتا ہے۔



اس دن تمام مسلمان صبح سویرے اٹھ کر فجر کی نماز پڑھتے ہیں، اور اس کے بعد اپنے عزیز و اقارب کی قبروں پے جا کر قرآن خانی کے بعد ان کی مغفرت کے لئے خصوصی دعا کرتے ہیں، چونکہ نماز عید سے پہلے غسل واجب ہے اس لئے عید کی نماز سے پہلے غسل و مسواک کرتے ہیں پھربہتر تو یہ ہے کہ عید کے موقع پر نئے کپڑے پہنے جائیں لیکن پھر بھی اگر استطاعت نہ ہو ہو کوئی صاف دھلا ہو کپڑا پہننا بھی جائز ہے۔ اور اور اچھی خوشبو لگانی چاہے کیو نکہ یہ ہمارے پیارے نبی اکرمؐ کی سنت بھی ہے۔


 پھر عید کی نماز کے بعد سب مسلمان بھائیوں کے پاس نادر موقع ہوتا ہے کہ وہ آپس میں گلے مل کر پرانے گلے شکوے اور ناراضگی کو ختم کر لیں اور یہ سب خوشیاں اور نعمتیں مزہب اسلام کے علاوہ کسی دوسرے مزہب میں نہیں۔



 


ہر مسلمان کے لئے یہ تہوار خشیوں سے بھرپور ہوتا ہے، خاص کر کے بچوں کے لئے جن کو اس دن اپنے بڑوں سے خوب عیدی ملتی ہے۔ اور خواتین بھی اس عید کے لئے  ایک دوسرے سے بڑھ چڑھ کے شاپنگ کرتی ہیں۔ لڑکیاں اپنے ہاتھوں پر مہندی سے طرح طرح کے ڈیزائین بناتی ہیں، رنگ برنگی چوڑیاں پہنتی ہیں اور خوب سے خوب تر کپڑوں کے جوڑے بناتی ہیں، اور کچھ تو بیوٹی پالرز کا بھی رخ اپناتی ہیں اپنے میک اپ کو فائنل ٹچ دینے کے لئے.


  ہر مسلمان کے لئے یہ تہوار خشیوں سے بھرپور ہوتا ہے، خاص کر کے بچوں کے لئے جن کو اس دن اپنے بڑوں سے خوب عیدی ملتی ہے۔ اور خواتین بھی اس عید کے لئے ایک دوسرے سے بڑھ چڑھ کے شاپنگ کرتی ہیں۔



 


عید کا تہوار ہو اور اس میں کھانوں کی بات نہ کی جائے تو مزاہ پھیکا پڑھ جائے گا۔ طرح طرح کی ڈشز اس دن کھانے کو ملتی ہیں۔ وہ خواتین ور لڑکیاں جن کو کچھ پکانا بھی نہیں آتا وہ بھی کوشش کرتی ہین کہ کچھ اچھا ہی بنائیں۔ اور اس دن ان حضرات کے تو مزے ہوتے ہیں جن کو کھانے میں احتیاط کی ضرورت ہوتی ہے اور سارا سال پرہیزی کھانا کھاتے ہیں، ان دنوں میں وہ بھی کھل کر کھانا کھاتے ہیں۔ کیا سویٹ دششز اور تو چکن بریانی، تکے اور اس کے علاوہ کئی طرح کے کھانے بنائے جاتے ہیں۔ لیکن اس دن میں سب سے سپیشل سویاں بنائی جاتی ہیں جو تقریبا ہر گھر مین ہی بنائی جاتی ہیں اور عید کی نماز کے بعد انہیں نوش کیا جاتا ہے۔


 


 


اس تہوار کے موقع پر سب سپیشل ہی ہوتا ہے، ٹی پروگرامز بھی عید کے حساب سے سپیشل سیٹ کئے جاتے ہیں، جن میں گانے۔ مذاخیہ پلیز، فیلمیں اور بھی کافی کچھ سیٹ کیا جاتا ہے۔ عید کے موقع پر مہمانوں کی آمد بھی کچھ لم نہیں ہوتی بس یہ سمجھ لیں کہ پورا کا پورا خاندان اکٹھا ہونے کا اس سے بہتر کوئی اور موقع نہیں ملتا۔ سب چاچے، مامے اکٹھے ہوئے ہوتے ہیں اور عید کا مزاہ دوبالا کر دیتے ہیں۔


 


 



About the author

qamar-shahzad

my name is qamar shahzad, and i m blogger at filamannax

Subscribe 1504
160