جہالت ہمارا بنیادی مسئلہ

Posted on at


 

یوں تو ھمارے ان گنت مسائل ہے مگر ہمارا بنیادی مسئلہ جہالت ہے جہالت کو عام طور پر تعلیم کے فقدان سے تعبیر کیا جاتا ہےمگر حقیقی معنوں میں جہالت ایک ہٹ دھرمی کا نام ہےاسکے لیے علم کا ہونا یا نہ ہونا ایک طرف مگر اصل مفہوم کسی کی بات کو تسلیم نہ کرنا ہےاس تنا ظر میں عدل جہل کا متضاد ہے عدل کو بھی عام طور پر انصاف سے تعبیر کیا جاتا ہے انصاف کا مطلب برابری یا برابر کی تقسیم کا عمل جبکہ عدل کا مطلب حق کو تسلیم کیا جاتا ہے گویا جہاں عدل ہو وہاں جہالت کا وجود بعیدالقیاس ہے

دنیا کے مختلف ممالک میں مختلف طریقے  مختلف اصول ،مختلف قواعد و ضوابط  ،مختلف معاشی اور معاشرتی اپنے مخصوص طریقہ کار کے تحت عدل و انصاف کے مخصوص قوانین و ضوابط کی روشنی میں حکومتی کاروبار چلاتے ہیں اور ان ممالک میں کوئی ہٹ دھرمی یعنی جہالت کا نام و نشان موجود نہیں ہمارا ملک یعنی پاکستان جسکی عوام نے اسے دینی نظریہ قرآن پاک کی روشنی کے تحت، جانی و مال قربانیاں دے کر یہ وطن حاصل کیا ہے اس وطن کی بنیادوں میں معصوم بے  گناہ ماوں بیٹیوں کی عصمتوں اور بے حرمتیوں کے زخم دفن ہیں

ہمارے ساتھ کیا ہوا اور کیا بیتی اتنی عظیم قربانیوں کا کیا صلہ ملا؟ رہزن رہبر بن گئے اور رہبر رہزن ،افسر شاھی، نوکر شاھی اور منصف شاھی غرض کہ سب نے ملکر شاھانہ زندگی اور لوٹ کھسوٹ کا کھیل جاری رکھا  ہمیں جمہوریت کے نام پر شرعی قوانین سے نہ صف دور کر دیا بلکہ ایسی معزور جمہوریت ہم پر مسلط کر دی کہ پہلے تو عوامی رائے سے منتخب ہونا مشکل ہے اعلی سطح پر جہالت کا یہ حال دیکھ کر نچلی سطح پر جھالت کو پنپنے کا موقع ملا

ہر کوئی اپنے دائرہ کار سے باہر نکلنے لگا  جہاں جی چاہا تھوک دیا جسے من نے برا جانا اسے برا کہنا شروع کر دیا،جہاں مفاد نظر آیا حلال کر دیا یوں عدل ہم سے دور ہو گیا اور جہالت  کے اندھیرے گھر کرتے چلے گئے  



About the author

sss-khan

my name is sss khan

Subscribe 0
160