آجکل کے امیر لوگوں اور علما کا عوام کے ساتھ رویہ

Posted on at


امیر لوگوں میں تین قسم کے آدمی ہوتے ہیں ۱۔ نواب اور زمیندار لوگ ۲۔بڑے بڑے تا جر اور سرمایہ دار لوگ ۳۔افسران حکومت ان تینوں طرح کے لوگوں میں ذاتی اور شخصی عیوب کے کے علاوہ ایک ایسا عیب ہے جسکا اثر عوام پر بہت زیادہ پڑتا ہے اور وہ یہ ہے کہ یہ لوگ عوام کے ساتھ تحقیر آمیز سلوک ،عیاشی اور اوباشی کے عیب کسی میں بھی ہوں وہ یہ کام اسقدر رازداری سے کرتے ہیں کہ عوام کو معلوم نہیں ہوتا سوائے ان چند افراد کے جو ان کے ہوس رانیوں کا آلہ کار بنتے ہیں اسلیئے ایسے ذاتی و شخصی عیوب کا اثر عام نہیں ہوتا

لیکن ویسے دن رات عوام کا واسطہ ان لوگوں کے ساتھ پڑتا ہے اسلیے وہ ان طریقہ سلوک سے بہت زیادہ اثرپذیرہوتے ہیں یہ امیر لوگ جب اپنے ملازموں ،اہل کاروں ،ماتحتوں سے ملتے ہیں تو اسوقت ان کے انداز تخاطب میں اس قدر سختی اور درشتی ہوتی ہے کہ ملنے والے لوگ اپنے آپ کوسخت ذلیل اور حقیر سمجھتے ہیں اسلیے یہ لوگ احساس کمتری کا شکار ہوجاتے ہیں اور رفتہ رفتہ اپنے آپ کو بے بس اور ناکارہ خیال کرنے لگتے ہیں احساس خودی و خوداری ،اور خود اعتمادی کا نام و نشان بھی نہیں رہتا اور ان کی اخلاقی خوبیاں بھی ختم ہوجاتیں ہیں پاکستان میں تو یہ عام بات ہے کہ زمیندار لوگ اپنے ملازموں کے ساتھ بلکل بھی انسانیت کا برتاو نہیں کرتے اکثر ایسا ہوا ہے کہ اگر ان کے ملازم سے غلطی سرزد ہوگئی تو اس ملازم پر کتے چھوڑ دیئے جاتے ہیں

علما کا بھی عوام کے ساتھ آجکل ایسا ہی سلوک ہے جیسا امیر لوگ کرتے ہیں یہ بھی غریب عوام سے ایسے ہی پیش آتے ہیں جیسا کہ امیر لوگوں اور افسروں کو اپنیدولت اور حکومت کا زعم ہوتا ہے ویسے ہی علما کو اپنے تقوی او علم کا غرور ہوتا ہے یہ اپنے آپ کو جنتی اور دوسروں کو دوذخی جانتے ہیں اور ان سے سیدھے منہ بات نہیں کرتے اگر کوئی غریب آدمی ان سے کوئی مسئلہ پوچھ لے اور مولانا کی بات سے اسکو تسلی نہ ہو اور وہ کوئی جرح کردے تو سمجھ لو کہ اسکی شا مت آگئی اسکو وہ وہ باتیں سننا پڑتیں ہے کہ خدا کی پناہ ایک عالم سے سوال کیا گیا کہ کیا انگریزی پڑھنا گناہ ہے تو اس نے جواب دیا کہ یہ تو سیدھا سیدھا کفر ہے اور یہ جتنی بے دینی پھیل رہی ہے سب انگریزی کی وجہ سے ہے ان علما کی اسی وجہ سے انگریزی تعلیم یافتہ نوجوان مولویوں کی بد اخلاقی کو دیکھ کر بلکل ہی بے دین ہو جاتے ہیں۔



About the author

sss-khan

my name is sss khan

Subscribe 1674
160