پاکیزگی کی اہمیت

Posted on at


حضور اکرم (صلی الله علیہ و آلہ وسلّم)-نے ارشاد فرمایا ،پاک رہنا آدھا ایمان ہے ،'(مسلم )
تشری ،
انسان دو چیزوں کا مجموعہ ہے قلب ،اور قالب ،اور ایمان کا کامل درجہ ان دو چیزوں کی پاکی سے حاصل ہوتا ہے،دل کی صفائی اور پاکیزگی تو سچے خیالات سے ہوتی ہے،کہ دنیا کا خالق ہمارا مالک حقیقی الله ہی ہے ،اور حضور (صلی الله علیہ و آلہ وسلّم)اس کے آخری نبی ہیں وغیرہ وغیرہ                                                                        

                   اگر دل نے ان سچائیوں کو قبول کر لیا تو تو انسانی ذات کا آدھا حصہ یعنی قلب پاک ہو گیا ،اور جب قلب کی پاکیزگی بی اختیارت کر لی یعنی اپنے جسم کو صاف ستھرا رکھا ،تو گویا نصف ایمان اور حاصل ہو گیا ،اب قلب و قالب ایمان فرمایا گیا دونو پاکیزہ ہو گئے ،جو کہ تکمیل ایمان کی علامت ہے ،اسی لئے حدیث شریف میں ظاہری پاکی کو نصف  ایمان فرمایا گیا       ا                                            

حاصل اس کا یہ ہے -کہ ہمارا مذہب ہمیں ہر طرھ سے ہمیں صاف ستھرا رہنے کا درس دیتا ہے ،اور ظاہری صفائی کا بی اس کے ہاں اتنا ہی اہتمام کرنا چایئ -جتنا باطن کی صفائی اور حقیقت یہ ہے کہ ظاہری پر اگندگی دل ا دماغ کو بی اگندہ ،میلا کچیلا کر دیتی ہے ،

 



About the author

abid-khan

I am Abid Khan. I am currently studying at 11th Grade and I love to make short movies and write blogs. Subscribe me to see more from me.

Subscribe 8679
160