موٹر سائیکل کے فائدے اور نقصان

Posted on at


                                                        موٹر سائیکل کے فائدے

موٹر سائیکل کی وجہ سے ہمیں بوہت سہولت ہوئی ہے ،کیوں کہ پہلے آپ کو اگر اسکول ،کالج ،یا کام پر جانا ہوتا دور دراز علاقوں میں تو گھنٹوں گھنٹوں بسوں ،گاڑیوں کا انتظار کرنا پڑھا اور اکثر لیٹ ہو جاتے ،لیکن اب موٹر سائیکل عام ہونے سے یہ مسلہ حل ہو گیا ہے ،اور اگر کوئی مہمان آ جائیں تو ان کے لئے کھانا لینے جانا ہوتا تو بوہت ٹائم لگ جاتا تھا بازار سے لانے میں اب یہ پریشانی بھی ختم ہو گیی

                         

اب تو سب موٹر سائیکل کا مزہ لیتے ہیں گرمیوں میں جب بوہت سخت گرمی ہو تو کئی لوگ موٹر سائیکل لے کر ڈیم ،اور نہروں کا رخ کر لیتے ہیں ،اور ٹھنڈے ٹھنڈے پانی میں نہانے کا مزہ لیتے ہیں ،خاص کر گرمیوں میں رات کو لیٹ تک لوگ باہر ہی موٹر سائیکل ڈرائیو کرتے ہیں ،اور نہ لوڈ شیڈنگ کا غم نہ گرمی کا بس کھلی فضا کے مزے لیتے رهتے ہیں

                          

کئی لوگ بچوں کو موٹر سائیکل پر اسکول چھوڑنے جاتے ہیں یا شام کو بچوں کو سمندر پر گھومنے لے کر جاتے ہیں اور خوب انجوئے کرتے ہیں ،جہاں موٹر سائیکل کے اتنے فائدے ہیں وہاں نقصانات بھی بوہت ہیں

                                        

                                                    موٹر سائیکل کے نقصانات

بازاروں ،گلی کوچوں ،روڈ ،پر ہر جگہ آپ کو نوجوانموٹر سائیکل پر نظر آئیں گے اور وو بھی اکیلے نہیں بلکہ اپنے دوستوں کے ساتھ ایک گروپ بنائے ہووے گویا ایسا لگتا ہے جیسے کسی کے ساتھ جنگ کرنے چلے ہوں ،

          

یہ نوجوان اکثر آپ کو موٹر سائیکل پر ویلنگ بھی کرتے نظر آتے ہیں جو کہ ایک خطرناک کام ہے انکو اتنی بھی اپنے ماں باپ کی پرواہ نہیں ہوتی کہ کتنی محنت سے ان لوگوں نے انہیں پالا پوسہ بڑھا کیا ،جب یہ نوجوان گھروں سے نکلتے ہیں تو ان کے ماں باپ ان کی خیر کی دوائیں کرتے ہیں

       

اور جب تک ان کا بچہ سہی سلامت گھر میں داخل نہ ہو جائے پریشان رهتے ہیں حالانکہ ،ان نوجوانو کو ذرا بھر بھی پرواہ نہیں ہوتی وو اپنی موج مستی میں لگے رهتے ہیں ،

                                 

آج کل کے نوجوان ایسے موٹر سائیکل چلاتے ہیں جیسے انکو اپنی زندگی سے پیار ہی نہ ہو کئی نوجوان ریس لگاتے ہیں ،میں نے خود ایک دفعہ اپنی آنکھوں سے دیکھا ہے کہ دو دوستوں نے ایک دوسرے کے ساتھ شرط لگائی کہ ہم دونوں میں سے جو پہلے پوھنچیگا وو جیت جائیگا ،اور وو ٣کلو مچھلی کھلائے گا ،البتہ ان لوگوں نے ریس لگانی شروع کی اور ان میں سے ایک جیت چکا تھا -اس نے کیا کیا جب جیت گیا تو ہاتھ اوپر کر کے ہلا رہا تھا کہ اچانک آگے سے ایک گاڑی نے ٹکر مار دی جب ہم وہاں پوھنچے تو ایسا لگ رہا تھا کہ یہ مر گیا ہے خیر ہم نے اسے ایک سوزوکی میں ڈال کر ڈی ،ایچ ،کیو ،ہسپتال ہریپور پوھنچایا ،ڈاکٹر اور پولیس وغیرہ سب آئے ڈاکٹر نے جب اسے چیک کیا تو انہوں نے بتایا کہ اس کی ناک کی ہڈی اور بازو اور ٹانگے ٹوٹ چکی ہیں اتنے میں اس کی ماں باپ باقی سب رشتےدار بھی وہاں آ گیئے اور ایسے رو رہے تھے جیسے کوئی معصوم سا بچہ چیخ چیخ کر کہ رہا ہو کہ مجھے میری چیز سلامت چاہیئے خیر ہم نے اور باقی لوگوں نے بھی انھیں حوصلہ تسلی دے کر چپ کرایا اس کی ماں ایسے لگ رہا تھا جیسے پاگل ہو گیی ہو

                       

جب دوسرا دن ہوا تو ہم پھر اسے ہسپتال میں دیکھنے گئے ،تو وو ہوش میں تھا اور رو رہا تھا ایسا لگتا تھا جیسے اس کی یہ خاھش ہو کہ میں ابھی اٹھ کر چلوں جیسے ایک دن پہلے چل پھر رہا تھا ،زور زور سے رو رہا تھا اور یہی آواز اس کی زبان سے نکل رہی تھی کہ الله ایک بار ٹھیک کر دے آیندہ ایسا نہیں کرونگا ،وو اب بھی ایک وہیل چیئر پر ہی ہے اس بات کو آپ کے سامنے کرنے کا مقصد یہ ہے کہ آپ اپنا اور اگر اپنا نہیں تو کم از کم اپنے بوڑے ماں باپ کا خیال کر کے ایسے کاموں سے باز آ جائیں اور فضول کے کام چھوڑ دیں ورنہ کل کو اللہ نہ کرے آپ کے ساتھ بھی یہ ہو سکتا ہے اور جلیگا کون کوئی بھی نہیں آپکے ماں باپ بھن بھائی ،

                   

دوسری بات یہ کہ آپ لوگوں نے دیکھا ہوگا آج کل موٹر سائیکل بوہت ام ہو گئے ہیں جس کی وجہ سے جرائم پیشہ عناصر میں بھی تیزی سے اضافہ ہو رہا ہے ،کئی نوجوان موٹر سائیکل پر جاتے ہووے لوگوں سے موبائل ،اور پیسے تک چھین لیتے ہیں جس کی وجہ سے غربت میں بھی اضافہ ہوتا جا رہا ہے ،اور کئی لوگ تو انہیں وارداتوں کی وجہ سے کام پر بھی جانا چھوڑ دیتے ہیں ہمیں ،آپکو ہم سب کو مل کر اس سے لوگوں کو روکنا ہوگا ''

                      

                           اللہ ہم سب اپنی خفظ و امان میں رکھے آمین

                          

 http://www.wikipedia.org/ writer abidkhan

 

 



About the author

abid-khan

I am Abid Khan. I am currently studying at 11th Grade and I love to make short movies and write blogs. Subscribe me to see more from me.

Subscribe 0
160