بچوں پر تشدد۔۔۔۔!۔

Posted on at


 بچوں پر تشدد۔۔۔۔!۔



  


                                                                                                     تشدد کیا ہے؟
تشدد پر نشونما پاتی ہوئی ثقافت میں رہتے ہوئے بہت سے تشدد آمیز روئیے عام ہو جاتے ہیں۔ جو بظاہر دکھائی نہیں دیتے اور روز مرہ زندگی میں برداشت کرنے پڑتے ہیں۔ اس سلسلے میں تشدد کی مضتلف اقسام میں تفریق، ان کے نام اور یہاں تک کہ گہرائی میں ان کی حالتوں کے بارے میں جاننا بے حد ضروری ہے، اور یہاں ہمارا تعلق بچے پر تشدد سے ہے۔




 تشدد کو ہم تین قسموں میں تقسیم کر سکتے ہیں۔

 جذباتی/ نفسیاتی تشدد
 جسمانی تشدد
 جنسی تشدد
 
                                                                                        جذباتی / نفسیاتی تشدد ۔۔
   
   جذباتی یا نفسیاتی تشدد دونوں ایک ہی ہیں کیونکہ جزبات کا براہ راست تعلق انسان کی نفسیات سے ہوتا ہے۔ لہٰذا ایسا تشدد جس میں بچے کے دذبات مجروح ہوں جذباتی / نفسیاتی تشدد کہلاتا ہے۔ مثلأ بچے کو غلط ناموں سے مکارنا یا ان کو ان کی کمزوریوں سے پکارنا مثلأ عینکو، موٹے ، اوئے وغیرہ لڑکوں کو لڑکیوں کی نسبت زیادہ پیار دینا اور سیولیات فراہم کرنا،  والدین کو بچے کو گھر ٓئے مہمان کے سامنے ڈانٹ دینا، مزید یہ کہ والدین کا بچوں پر عدم اعتماد بھی بچے کو نفسیاتی دباؤ کاشکار کر دیتا ہے۔




                                                                                                                جسمانی تشدد۔۔



   جیسا کہ نام سے ظاہر ہے کہ وہ تشدد جو کہ انسانی جسم کیساتھ کیا جائے جسمانی تشدد کہلاتا ہے۔ مثلأ دیکھنے میں ٓرہا ہے کہ سکولوں میں بچوں کو بےتحاشہ مارا پیٹا جاتا ہے۔ نتیجتأ کبھی کبھار بچے جسمانی طور پر معزور بھی ہوجاتے ہیں۔ مگر بعض اساتزہ اس بات کا قعطأ خیال رکھے بنا ان پر تشدد کرتے ہیں۔




 بچے کو تھپڑ مارنا، بازو توڑنا، بازو مروڑ دینا، گال زور زور سے مروڑنا، اعضا باندھ دینا رغیرہ سب جسمانی تشدد کی مثالیں ہیں۔



About the author

qamar-shahzad

my name is qamar shahzad, and i m blogger at filamannax

Subscribe 1504
160