کالا بچھو ، کروڑوں مالیت کا

Posted on at


 

اللہ تعالی نے جب یہ دنیا بنائی تو اس میں ہر قسم کے جاندار پیدا کیے اور ان سب جانداروں میں بنی نوع انسان کو اشرف المخلوقات کا درجہ دیا گیا ان جانداروں میں بہت سے جاندار انسان کے لیے فائدہ مند ہیں جبکہ بعض جانور یا حشرات ایسے بھی ہیں جو انسان کے لیے بہت موذی ہیں ان میں سرفہرست سانپ ، بچھو ، ٹائیگر، چھپکلی وغیرہ شامل ہیں ہمارے ملکمیں جو زہریلے سانپ یا بچھو پائے جاتے ہیں وہ صحرائی علاقے جیسے تھرپارکر ، سندھ ، اور بہاولپور کے علاقے میں پائے جاتے ہیں گرمی کے موسم میں تو ان علاقوں کے باشندے کو ان سے بہت تنگ آجاتے ہیں اور ان کے ڈسنے کی وجہ سے تو بعض لوگوں کی موت واقع ہو جاتی ہے

پاکستان میں آجکل خبروں اور میڈیا میں ایک خبر بہت تیزی سے گردش کر رہی ہے کہ پاکستان کے صحرائی علاقے میں پائے جانے والا کالا بچھو کروڑوں روپے کا ہے اور اس کالے بچھو کو کالا سونا کا نام دیا جا رہا ہے یعنی یہ سونے سے بھی مہنگا ہے لوگ راتوں رات امیر ہونے کے لیے اس کالے بچھو کو پکڑنے کے لیے پاکستان کے صحرائی علاقوں کا رخ کر رہے ہیں کہتے ہیں کہ اس کالے بچھو کا اگر وزن سو گرام ہو تو اسکی قیمت دو کروڑ روپے ہے اور اگر ۵۰ گرام کا بچھو ہو تو اسکی قیمت ۳۰ سے ۳۵لاکھ روپے ہے ایک خبر میں یہ بتایا گیا کہ اس کی خرید و فروخت کراچی مین بلیک میں کی جاتی ہے اور اس شخس نے بتایا جو کہ کمیشن لے کر یہ ڈیل کرواتا ہے کہ ایک سال کے اندر اس نے تقریبا پچیس لاکھ روپے کمیشن کے ذریعے کمائے

بعض لوگوں کے مطابق یہ خبر صرف ایک خبر ہی ہے کیونکہ بعض لوگ لاکھوں مین بچھو وخریدتے ہیں تو جب وہ بیچنے جاتے ہیں تو ان کو صرف چند ہزار روپے ہی ملتے ہیں بعض لوگ تو کہتے ہیں کہ جب سندھ میں کچھ چائینز انجنیئر آئے تو ان کی پسندیدہ خوراک بچھو ہی تھی تو انہوں نے لوگوں کو اچھے پیسے دے کر بچھو پکڑنے کو کہا تو وہ لوگ ان کے لیے بچھو پکڑ کر لاتے  اور معاوضہ لیتے اس لیے بھی یہ افواہ پھیلی ہوئی تھی  اس لیے دھوکہ نہ کھائیے گا۔

    



About the author

sss-khan

my name is sss khan

Subscribe 1674
160